اس وظیفہ سے لاکھوں کا قرض دنوں میں ختم ہو گیا

بیروز گاری ، ملازمت کا نا ملنا گھریلو پریشانیاں یا پھر کسی  بھی قسم کی تنگدستی ہو تو ایک ایسا وظیفہ ہے جس کے پڑھنے سے مذکورہ پریشانیاں ختم ہوجائے گی اور دولت کی فروانی ہوجائے گی ۔

اس سے گھر میں برکت اور سکون ہوگا ۔ ملازمت مل جائے گی ، مال میں بھی برکت کے اثرات ہونگے

حضرت علی رضی اللہ کے پاس ایک غلام آیا اور اس نے کہا کہ میں نے اپنے آقا سے مکاتبت کر لی ہے لیکن ادائگی کے لئے میرے پاس رقم نہیں آپ کچھ ذکر بتا دے کہ میرا کام ہوجائے ۔  اور میں آزاد ہو جاؤ

حضرت علی نے فرمایا کہ کیوں نہ میں تمہیں وہ دعا سکھاؤ جو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھے سکھائی ۔ دعا یہ ہے کہ ہر نماز کے بعد یہ دعا پڑھے اور اگر ممکن ہو تو اس کو اپنا معمول بنا لے ان شاءا للہ کچھ دنوں میں ہی ادھار ختم ہوجائے گا اور مال میں برکت اور فراوانی ہو گی ۔

دعا درج ذیل ہے ۔

اللھم اکفنا بحلالک عن حرامک و اغننا بفضلک عمن سواک

سورۃ الفاتحہ کا یہ ایک رکوع پڑھلیں ہر مشکل آسان

بدن کا درد ہو یا بخار ۔ کینسر ہو یا پھر کالا یرقان ،فالج۔ زکام ہر طرح کی چھوٹی بڑی بیماریوں کے لئے صورت فاتحہ کا عمل نہایت آزمودہ ہے ۔

اس عمل کے نتائج عجیب و غریب ہے اور جس نے بھی یہ عمل کیا اس کو نمایاں تبدیلی محسوس ہوئی ۔ عمل درج ذیل ہے۔

نماز فجر کی سنتوں اور فرض کے درمیان 41 مرتبہ سورۃ فاتحہ کو بسم اللہ الرحمن الرحیم کے ساتھ ملا کر پڑھے اول و آخر 7 مرتبہ درود پڑھے ۔ نماز فجر کے فورا بعد اس عمل کو70 دوبارہ دہرائے ۔اور اسی ترتیب سے عشاء کی نماز کے بعد اس کو پڑھے:

اگر کسی وجہ یا مجبوری سے فجر کے وقت نہ پڑھ سکے تو اس کے فجر کے بعد ضرور پڑھے ۔ اس کے ساتھ روزانہ جتنا ہو سکے ۔ :ایاک نعبد و ایاک نستعین: کا ورد کرتے رہیں

میں جب نیند سے گھبرا کر اُٹھتا ہوں تو صحن میں ایک تاریک سایہ نظر آتا ہے

ابو دجانہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں میں نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں عرض کیا:
’’یا رسول اللہ! میں اپنے بستر پر سوتا ہوں تو اپنے گھر میں چکی چلنے کی آواز اور شہد کی مکھی کی بھنبھناہٹ سنتا ہوں۔ جب میں گھبرا کر سر اٹھاتا ہوں تو مجھے ایک تاریک سایہ نظر آتا ہے جو بلند ہو کر میرے صحن میں پھیل جاتا ہے۔ میں اسے چھوتا ہوں تو اس کی جلد خارپشت (سیہی) کی طرح معلوم ہوتی ہے اور وہ میری طرف آگ کے شعلے پھینکتا ہے۔ لگتا ہے کہ وہ مجھے بھی جلادے گا اور میرے گھر کو بھی۔‘‘
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’تمھارے گھر میں رہنے والا جن بہت برا ہے، وگرنہ رب کعبہ کی قسم! کیا تیرے جیسے شخص کو بھی تکلیف دی جاتی ہے!‘‘ پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے قلم دوات منگوا کر سیدنا علی رضی اللہ عنہ کو یہ عبارت لکھوائی:
بِسْمِ اللّٰہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ، ھٰذَا کِتَابٌ مِّنْ مُحَمَّدٍ رَّسُوْلِ رَبِّ الْعَالَمِیْنَ اِلٰی مَنْ طَرَقَ الْبَابَ مِنَ الْعُمَّارِ وَالزَّوَّارِ، اَمَّا بَعْدُ: فَاِنَّ لَنَا وَلَکُمْ فِی الْحَقِّ سَعَۃً فَاِنْ تَکُ عَاشِقًا مُوْلِعًا اَوْ فَاجِرًا مُقْتَحِمًا اَوْ زَاعِمًا حَقًّا اَوْ مُبْطِلًا، ھٰذَا کِتَابُ اللّٰہِ یَنْطِقُ عَلَیْنَا وَعَلَیْکُمْ بِالْحَقِّ اِنَّا کُنَّا نَسْتَنْسِخُ مَا کُنْتُمْ تَعْمَلُوْنَ وَرُسُلُنَا یَکْتُبُوْنَ مَا تَمْکُرُوْنَ اتْرُکُوْا صَاحِبَ کِتَابِیْ ھٰذَا وَانْطَلِقُوْا اِلٰی عَبْدَۃِ الْاَصْنَامِ وَاِلٰی مَنْ یَزْعُمُ اَنَّ مَعَ اللّٰہِ اِلٰھًا آخَرَ، لَا اِلٰہَ اِلَّا ھُوَ، کُلُّ شَیْئٍ ھَالِکٌ اِلَّا وَجْھَہُ لَہُ الْحُکْمُ وَاِلَیْہِ تُرْجَعُوْنَ تُغْلَبُوْنَ ((حٰمٓ )) لَا تُنْصَرُوْنَ، حٰمٓ عٓسٓقٓ تَفَرََّقَ اَعْدَائُ اللّٰہِ وَبَلَغَتْ حُجَّۃُ اللّٰہِ وَلَا حَوْلَ وَلَا قُوَّۃَ اِلَّا بِاللّٰہِ فَسَیَکْفِیْکَھُمُ اللّٰہُ وَھُوَ السَّمِیْعُ الْعَلِیْمُ

اس کے بعد ابودجانہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: ’’میں اسے لپیٹ کر اپنے گھر لایا اور سر کے نیچے رکھ کر رات کو سو گیا اور میں ایک چیخنے والے کی چیخ سے بیدار ہوا، کوئی کہہ رہا تھا: ’’اے ابودجانہ! لات و عزیٰ کی قسم! ان کلمات نے ہمیں جلا ڈالا، تمھیں تمھارے نبی کی قسم! نامہ مبارک یہاں سے اٹھالو، ہم تیرے گھر میں آئندہ نہیں آئیں گے۔‘‘ ایک روایت میں ہے: ’’ہم نہ تمھیں ایذا دیں گے، نہ تمھارے پڑوسیوں کو اور نہ اس جگہ والوں کو جہاں یہ خط مبارک ہوا۔‘‘ ابو دجانہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں میں نے جواب دیا: ’’مجھے میرے رسول کے اس حق کی قسم، جو اللہ نے مجھ پر واجب کیا ہے! میں اس کو یہاں سے نہیں اٹھائوں گا جب تک کہ میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے مشورہ نہ کرلوں۔‘‘ سیدنا ابو دجانہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں: ’’جنات کے چیخنے، رونے اور بلبلانے سے وہ رات میرے لیے بہت طویل ہوگئی۔ صبح کی نماز میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ ادا کی اور جنات کا معاملہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے عرض کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’اے ابو دجانہ! تم وہ نامۂ مبارک جنات سے اٹھا لو اور اس ذات کی قسم، جس نے مجھے حق کے ساتھ مبعوث فرمایا! ان جنات کو قیامت تک عذاب کی تکلیف ہوتی رہے گی۔‘‘
[لقط المرجان فی أحکام الجان للسیوطی مترجم (ص ۲۲۹ تا ۲۳۱)]

رزق میں بے پناہ اضافے کیلئے روزانہ یہ آسان سا عمل کریں۔

نسان جلد مایوس ہوجاتاہے لیکن تمام دنیا وی مسائل کا حل اللہ تعالیٰ نے اپنی کلام پاک میں دے رکھا ہے ۔ اگر شادی شدہ جوڑے کو بیٹے کی پیدائش کی خواہش ہوتو وہ سورۃ یٰسین کا ورد کریں اور اللہ تعالیٰ سے اپنے حق میں دعا مانگیں، قرآن مجید کا دل کہلانے والی یہ سورۃ مزید کن کن کاموں کیلئے پڑھی جاسکتی ہے ۔ حصول اولاد نرینہ:جس کے ہاں صرف لڑکیاں ہی پیا ہوتی ہوں اور وہ اولاد نرینہ کی خواہش رکھتا ہو تو اسے چاہیے کہ اپنے مقصد کے حصول کے لئے نماز کے بعد گیارہ مرتبہ یٰسین پڑھ کر رب تعالیٰ سے دعا مانگے اور جب جمعہ کی نماز ادا کرے تو مسجد میں بیٹھ کر گیارہ مرتبہ یٰسین کا ورد کرے اور پھر اولاد نرینہ کے لئے رب تعالیٰ کی بارگاہ میں دعا مانگے۔

حق تعالیٰ نے چاہا تو بہت جلد اس کی امید برآئے گی۔ رب تعالیٰ اسے اولاد نرینہ کی نعمت سے نوازے گا۔ سورہ یٰسین کی برکت سے اس کے گھر میں اس نعمت کے عطا ہوجانے سے خوشیوں کا دور دورہ ہوجائے گا۔
ذہنی پریشانی سے نجات:ذہنی سکون حاصل کرنے کے لئے اور ذہنی پریشانی کے خاتمہ کے لئے نماز عشاءکے بعد اسی جگہ پر بیٹھ کر باوضو حالت میں گیارہ مرتبہ یٰسین پڑھے اور رب تعالیٰ سے ذہنی سکون حاصل کرنے کے لئے دعا مانگے تو مطلوبہ مقصد حل ہوجائے گا۔

ذہنی سکون کیلئے:اس مقصد کے لئے سات یوم تک سورہ یٰسین کا وظیفہ مندرجہ بالا طریقے سے کریں، اس کے بعد آپ محسوس کریں گے کہ ذہن کو سکون کی دولت حاصل ہوگئی ہے اور ہر قسم کی فکر و پریشانی ذہن سے دور ہوگئی ہے۔

وبا سے نجات:اگر کسی مقام پر کوئی اس قسم کی وبا پھیل گئی ہو، جس کے علاج میں سخت دشواری اور مشکل پیش ہو یا پھر کسی مقام پر وبا کے پھیل جانے کا خطرہ ہو تو ایسی صورت میں مسجد میں یا کسی وصاف مقام پر اکٹھے ہوکر باوضو حالت میں ایک سو ایک مرتبہ یٰسین پڑھ کر رب تعالیٰ سے دعا مانگنے سے وبا کا خطرہ ٹل جاتا ہے اور اگر وبا پھیل چکی ہو تو اس سے نجات حاصل ہوجاتی ہے۔

باری تعالیٰ یٰسین کی برکت سے اس علاقے کو ہر قسم کی مہلک وبا سے محفوظ فرمادیتا ہے۔امراض قلب سے نجات:امراض دل کے لئے یٰسین شریف کا پڑھنا اکسیر کی حیثیت رکھتا ہے۔ دل کے امراض میں مبتلا افراد شفا حاص کرنے کے لئے گیارہ دن تک نماز فجر کے بعد تین مرتبہ یٰسین پڑھیں۔ ہر قسم کے دل کے مرض میں شفا حاصل ہوجائے گی۔

امراض کان سے نجات:کان میں شائیں شائیں اور شوروغل ہونے کی صورت میں ہر نماز کے بعد گیارہ مرتبہ سورہ یٰسین پڑھیں اور یٰسین کے بعد باری تعالیٰ سے دعا کریں تو حق تعالیٰ نے چاہا افاقہ ہوگا۔مال و برکت ہو:مال و دولت میں برکت اور زیادتی کے خواہشمند اگر اس یٰسین کو ہر نماز کے بعد طاق اعداد کے مطابق پڑھیں تو حق تعالیٰ نے چاہا مال میں برکت پیدا ہوجائے گی۔

رات کے وقت ناخن کاٹنے سے کیا ہوتا ہے؟ امام علی علیہ السلام نے ایسے لوگوں کو کیا وارننگ دی؟

رات کے وقت ناخن کاٹنے سے کیا ہوتا ہے؟ ایک رات حضرت امام علی عشاء کے بعد اپنے گھر کی طرف تشریف لے جارہے تھے تو ایک شخص باہر بیٹھا اپنے ناخن کاٹ رہا تھا. حضرت علی کرم اللہ وجہہ اس شخص کے نزدید گئے اور فرمایا اے بندے میں نے الله کے رسول صلى الله عليه وسلم سے سنا کہ جو انسان رات کے وقت اپنے ناخن کاٹتا ہے وہ تنگ دستی، بیماری، اور پریشانی میں گرفتار ہوجاتا ہے. وہ شخص فورًا ڈر کر ادب سے کھڑا ہوگیا اور بولا اے امام علی اگر آپ اجازت دیں تو میں آپ سے ایک سوال پوچھ سکتا ہوں؟ حضرت علی نے جواب دیا اے الله کے بندے میں نے آج تک کسی سوالی کو خالی ہاتھ نہیں بھیجا. پوچھو جو پوچھنا چاہتے ہو.

اس شخص نے کہا کہ رات کو ناخن کاٹنے سے کیوں بیماری، پریشانی، اور تنگدستی آتی ہے؟ حضرت علی کرم اللہ وجہہ نے جواب دیا کہ اے شخص جب حضرت آدم علیہ السلام جنت میں تھے تو جنت کی سب سے بہترین دھات جس سے لوح محفوظ کو بنایا گیا تھا الله نے اس دھات کا لباس حضرت آدم کے جسم پر پہنایا. یہ لباس ناخن کی طرح تھا جس سے آدم اور اسکی بیوی کا جسم مکمل طور پر ڈھکا ہوا تھا. افسوس جب حضرت آدم نے نافرمانی کی یعنی اس شجر کے نزدیک گئے جسکا انھیں سختی سے منع کیا گیا تھا تو الله تعالیٰ نے آدم سے اس لباس کو جدا کردیا اور حضرت آدم کا جسم انکو نظر آنے لگا. سو الله نے ناراض ہوکر حضرت آدم اور انکی بیوی حضرت حوا کو زمین پر اتار دیاتاکہ آدم علیہ السلام اور اولاد آدم مختلف امتحانات سے گزر کر جنت حاصل کر سکیں اور یہ ثابت کر سکیں کے وہ جنت میں رہنے کے قابل ہیں یا نہیں.

لیکن اس نورانی لباس کا کچھ حصّہ انسان کے ہاتھوں کی انگلیوں اور پاؤں کی انگلیوں پر باقی رہ گیا. جو انسان رات کو جسم کے اس حصّے یعنی ناخنوں کو کاٹتا ہے تو اس وجہ سے اسکے کاموں میں مشکلات پیدا ہوتی ہیں اور آہستہ آہستہ صحت خراب ہو جاتی ہے. جو انسان اپنے ناخن کاٹ کر راستے میں پھینک دے اور یہی ناخن سب سے پیروں تلے کچلے جائیں تو ایسا انسان بیمار ہو جاتا ہے، پریشانی ایسے شخص کو گھیر لیتی ہے اور تنگدستی اسکا مقدر بن جاتی ہے. کیونکہ الله نے رات کو سکون، آرام، اور عبادت کے لیے بنایا ہے. چاند کی روشنی انسانی وجود کو تصوف اور معرفت سے ملاتی ہے. ناخن کا بڑھنا ایک فطری عمل ہے اور یہ زندہ ہونے کی نشانی ہے سو انسان کو اپنے جسم کے ان نورانی حصّوں کو رات کو کاٹنے سے گریز کرنا چاہیے اور ناخنوں کو کسی ایسی جگہ پھینکنا چاہیے جہاں یہ کسی کے پیروں تلے نہ آئیں.

ایک بار یہ عمل کریں اپنی آنکھیں سے دنیا کی نعمتیں دیکھے گئے

آج جوآپ کوعمل بتایا جا رہا ہے یہ نہایت ازمودہ عمل ہے اس عمل کی سب سے بڑی بات یہ ہے کہ یہ حدیث شریف سے ثابت ہے نبی کریم ﷺ نے بھی یہ عمل کرنے کو دیا تھا۔ نبی کریم ﷺ دو جہانوں کے سردار آقائے دو عالم کی ہربات حق ہے اورسچ ہے۔ حدیث شریف کام مفہوم یہ ہے کہ ایک شخص حضورﷺ کی خدمت میں اپنے فقراورفاقے کا شکواہ لے کرآیا آپﷺ نے ایسے یہ عمل فرمایا کچھ عرصے کے بعد آیا توعرض کی اب تو میرے پروسی بھی میرے حال سے استفادہ کرتے ہیں اللہ تعالی نے اتنا عطاء کیا ہے کہ میں تقسیم کرتا ہوں
ناظرین اس عمل کی خوبی یہ ہے کہ اللہ پاک اتنا مال و دولت عطاکرتے ہیں کہ عمل کرنے والا خود بھی مال و دولت سے فائدہ حاصل کرتا ہے اور لوگو کو بھی دیتا ہے یعنی کہ اللہ پاک اس عمل کو کرنے والے کواتنی دولت دے دیتا ہے کہ وہ دوسروں کو تقسیم بھی کرے تو پھر بھی کوئی فرق نہیں ہے پڑتا بلکہ کے دوسروں کی مدد کرنے سے تو اللہ پاک دولت میں اوربھی برکت فرما دیتا ہے۔ ناظرین آپ بھی اس عمل سے فائدہ اٹھائیں اب تک کڑورں افراد اس عمل سے فائدہ اٹھا چکے ہیں اس عمل پر یقین کریں اتنا ہی بہت ہے کہ یہ عمل حدیث شریف سے ثابت ہے ناظرین کاروبارمیں برکت کے لئے گھر میں برکت کے لئے امیر ہونے کے لئے یہ وظیفہ بہت ہی مجرب ہے۔ اگر آپ اس عمل کو اپنی زندگی کا حصہ بنا لیں گے تو ثواب کے ساتھ ساتھ مال و دولت اوربرکت بھی بہت زیادہ ہوگی۔ یہ عمل کیا ہے آپ کی خدمت میں پیش کرنا چاہتا ہوں کہ آپ جب بھی گھر میں داخل ہو چاہے دن میں جتنی بار بھی آنا جانا ہو ایک بار درودشریف ایک بار بسم الله الرحمن الرحيم اور ایک بارسوۃ اخلاص پڑھ کرگھر میں داخل ہوں تو گھر والوں کو سلام کریں اسلام علیکم چاہے گھر میں کوئی فرد نہ ہو لیکن سلام ضرورکریں یہ عمل مستقل کریں اورگھر کا ہرفرد کرے اگر عمل تیز کرنا چاہتے ہیں تو سورۃ اخلاص 3 بار پڑھیں۔ یہ ایسا عمل ہے جوغریب کو امیر بنا دیتا ہے جس کے پاس کچھ بھی نہ ہو وہ بھی لوکھوں کا مالک بن جاتا ہے۔ ناظرین درودشریف ایسا عمل ہے جو اللہ تعالی اورفرشتے بھی نبی اکرمﷺ پر بھیجتے ہیں۔ درود شریف کے حوالے سے حضرت انس رضی اللہ عنہ روایت ہے

کہ نبی اکرمﷺ نے فرمایا جو شخص مجھ پر ایک مرتبہ درود شریف پڑھے گا اللہ پاک اس پر دس رحمتیں فرمائے گا اور اس کی دس خطائیں معاف کی جائیں گی اور اس کے دس درجے بلند کئے جائیں گے۔ نبی اکرم ﷺ نے فرمایا جس نے دس بار صبح اور دس بار شام کے وقت مجھ پردرودشریف بھیجا ایسے قیامت والے دن میری شفاء نصیب ہوگی ناظرین درود شریف کی بہت زیادہ فضیلت ہے۔ اور اگر ہم بسم اللہ کی فضیلت کے بارے میں تھورا سا جان لیں تو ہمیں معلوم ہو جائے گا کہ اس عمل میں اتنی طاقت کیوں ہے اللہ تعالی نے بعض چھوٹی چیزوں میں بری برکت عطا کی ہوئی ہے بسم اللہ الرحمٰن الرحیم بھی اس میں شامل ہے اس آیت کے زریعے اللہ تعالی کی غیبی مدد حاصل ہوتی ہے اس چھوٹی سی آیت میں اس قدر طاقت ہے کہ کوئی عام مسلمان اس کا تصور بھی نہیں ہے کرسکتا ہمارے پاس بسم اللہ الرحمٰن الرحیم نی قوت طاقت ہونے کے باوجود اگر ہم مایوس ہوتے ہیں تو یہ بہت افسوس کی بات ہے بسم اللہ الرحمٰن الرحیم کے برے فضائل ہیں رسولﷺ نے فرمایا کہ مجھ پر ایک ایسی آیت اتری ہے کہ کسی نبی پر سوائے حضرت سلمان کے ایسی آیت نہیں اتری یہ آیت بسم اللہ الرحمٰن الرحیم ہے حضرت جابررضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ جب یہ آیت اتری بادل مشرق کی طرف چھٹ گئے ہوائیں ساکن ہوگئیں اور پانی ٹھہر گیا شیاطین پرآسمان سے شولے گرائے گئے اللہ تعالی نے اپنی عزت اورجلال کی قسم کھا کر فرمایا جس چیزپرمیرا یہ نام لیاجائےگا اس پرظروربرکت ہوگی۔ ناظرین بسم اللہ الرحمٰن الرحیم کی اتنی برکت اور فضیلت ہے جس کا ہم سب مسلمانوں کو اندازہ ہی نہیں ہے۔

سورۃ اخلاص کے بارے میں اگر میں آپ کو بتاتا چلوں تو اس کے بارے آپ جو حدیث سنیں گے تو آپ کا ایمان اور تازہ ہو جائے گا۔ ایک روایت میں ہے حضورﷺ نے اپنے صحابہ سے فرمایا کہ کیا تمہارا ایک آدمی اس بات پرعاجز ہے کہ ایک رات میں ایک تہائی قرآن پڑھے صحابہ نے کہا یا رسول ﷺ ہم میں سے کون اتنی طاقت رکھتا ہے تو آپﷺ نے فرمایا سورۃ اخلاص آخر تک ایک تہائی قرآن ہے سوۃ اخلاص کو ایک دفعہ پڑھنے کا ثواب ایک تہائی قرآن کے برابر ہے۔ سلام کے حوالے سے گھر میں داخل ہوتے ہی سلام کرنے کا کیا فائدہ ہوتا ہے حضورپاکﷺ کا ارشاد ہے جب تم اپنے گھروں میں جائو تو گھر والوں کوسلام کرو اس لئے کہ اگر تم سلام کردیتے ہو توشیطان تمہارے گھرمیں داخل نہیں ہے ہوتا تو ناظرین جس گھرمیں شیطان نہ ہووہاں پرتوخیروبرکت خود بخود آئےگی خیرو برکت کا وہاں پربسیرا ہوجائے گا شیاطین چلے جائیں گے اللہ کی رحمت ہی رحمت ہوگی اورجہاں اللہ کی رحمت ہو وہاں برکت ظرورہوتی ہے وہاں ہر چیز میں اللہ پاک اپنی رحمت عطاء کرتاہے۔ اگر آج کا عمل اچھا لگا ہو تولائک کریں اوراگرآپ چاہتے ہیں اس کادوسروں کو بھی فائدہ ہوتوزیادہ سے زیادہ شیئرکریں

سورۃ الرحمٰن پڑھنے کے فائدے

سورۃ الرحمن کی ہر آیت سننے کے ساتھ اس کے جسم کے اندر ایک حرارت پیدا ہوتی ہے اور جب سورۂ رحمن کی تلاوت سننے کے بعد وہ آدھا گلاس پانی پیتا ہے تو وہ اس طرح محسوس کرتا ہے کہ جس طرح انگاروں کے اوپر پانی ڈالا جاتا ہے۔میڈیکل سائنس ہیپاٹائٹس کے امراض سے متعلق مایوسی کا شکار ہوچکی ہے۔ دنیا میں اس وقت ہیپاٹائٹس کے مرض میں مبتلا مریضوںکی رجسٹرڈ تعداد چالیس کروڑ ہے ۔ جبکہ پاکستان میں رجسٹرڈ مریضوں کی تعداد دو کروڑ سے تجاوز کرچکی ہے۔ ایسے میں میڈیکل سائنس کی بے بسی انسانی ذہن اور معاشرے کی تباہی کا پیغام دے رہی ہے مگر سورۂ رحمن کے سننے سےیہ مرض چند ہی ایام میںوجود سے ایسے غائب ہوجاتاہے جیسے کبھی اس کا نام و نشان ہی نہ تھا۔

سورۂ رحمن کے ذریعے لوگوں کی ذہنی‘ جسمانی اور روحانی بیماریوںکا یقینی علاج ہوتا ہے۔سورہ رحمن کی قرآن تھراپی کے ذریعے لاعلاج مریضوں کا کامیاب علاج ہوچکا ہے بلکہ بہت سے لوگوں نے بتایا کہ سورۂ رحمن سننے سے ان کی بہت سی پیچیدہ بیماریاں ختم ہوگئیں ہیں۔ سورۂ رحمن قاری عبدالباسط کی آواز میں بغیر ترجمہ پچاس منٹ کے دورانیے پر مشتمل ہے۔ جب کوئی مکمل طور پر اپنی توجہ سورۂ رحمٰن کی طرف کرکے تلاوت سنتا ہے اور اپنی آنکھیں بند کرتا ہے تو سورۂ رحمٰن کی ہر آیت سننے کے ساتھ اس کے جسم کے اندر ایک حرارت پیدا ہوتی ہے اور جب سورۂ رحمٰن کی تلاوت سننے کے بعد وہ آدھا گلاس پانی پیتا ہے تو وہ اس طرح محسوس کرتا ہے کہ جس طرح انگاروں کے اوپر پانی ڈالا جاتا ہے۔ سورۂ رحمٰن کے ان مشاہدوں کا جب ناروے میں پتہ چلا تو ناروے اوسلو سے پرائم ٹی وی سے یہ پروگرام پوری دنیا میں دکھایا گیا اور سورۂ رحمٰن کے پروگرام کی افادیت نے پوری دنیا کو چونکا دیا ہے انہوںنے کہا کہ جو لوگ دکھی‘ الجھن یا ذہنی کرب میں مبتلا ہوں وہ سورۂ رحمٰن کی تلاوت دن میں تین مرتبہ متواتر سات دن تک سنیں۔ تمام بیماریوں کا علاج قرآن کی آیات میں موجود ہے اگر ہم ان آیات کو غور سے سنیں۔ اس کے ذریعے کینسر‘ فالج‘ شوگر‘ ہارٹ اٹیک اور

دوسرے بے شمار امراض کا علاج کیا جاچکا ہے گزشتہ سات آٹھ سال سے پاکستان کے مختلف شہروں پشاور‘لاہور‘ ملتان‘ کوئٹہ‘ اسلام آباد میں ہزاروں مریضوں کا علاج ہوچکا ہے۔ دنیا کی ہربیماری کاعلاج سورۂ رحمن کی تلاوت سننے سے ممکن ہے اس لیے لوگوںکو چاہیے کہ قاری عبدالباسط کی آواز میں سورۂ رحمٰن کی بغیر ترجمہ کی کیسٹ لے کر سات دن تک سنیں‘ ان کی بیماری ختم ہوجائے گی۔