Home / Articles / تاجر گناہگارہ کیوں؟

تاجر گناہگارہ کیوں؟

 حضرت رفاعہ بن رافع بن مالک رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ ہم لوگ رسول اللہ ﷺ کے ساتھ باہر گئے تھے۔ لوگ صبح کے وقت خریدوفروخت میں مشغول تھے۔ آپ ﷺ نے انہیں آواز دی: ” اے تاجروں کی جماعت! ۔” جب ان لوگوں نے اپنی نظریں اٹھائیں اور گرد نیں لمبی کیں [اور نبی ﷺ کی طرف متوجہ ہو گئے] تو آپ ﷺ نے فرمایا: “تاجر لوگ قیامت کے دن فاجر [اور گناہگاہ] بن کر اٹھیں گے، سوائے اس کے جو اللہ سے ڈرتا رہا اور اس نے نیکی کی اور سچ بولا۔ [یعنی جھوٹ اور دھوکے سے پرہیز کیا۔]” عَنْ إِسْمَاعِيلَ بْنِ عُبَيْدِ بْنِ رِفَاعَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَدِّهِ رِفَاعَةَ، قَالَ: خَرَجْنَا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَإِذَا النَّاسُ يَتَبَايَعُونَ بُكْرَةً، فَنَادَاهُمْ: يَا مَعْشَرَ التُّجَّارِ فَلَمَّا رَفَعُوا أَبْصَارَهُمْ وَمَدُّوا أَعْنَاقَهُمْ، قَالَ: «إِنَّ التُّجَّارَ يُبْعَثُونَ يَوْمَ الْقِيَامَةِ فُجَّارًا، إِلَّا مَنِ اتَّقَى اللَّهَ وَبَرَّ وَصَدَقَ» {سنن ابن ماجہ: 2146‎

About khan

Check Also

صرف ایک لونگ روزانہ استعمال سے کیاہوتا ہے؟

لونگ قدرت کا وہ انمول تحفہ ہے جو قدیم طریقہ علاج اور جدید ہیلتھ سائنس …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *